ब्राउजिंग श्रेणी

Urdu

بی جے پی کی تاناشاہی اور کشمير کا دکھ

جو لوگ کشمیر ميں رہنے والے ۸۰۲ ہندو پريواروں کا درد نہيں سمجھ سکتے۔ انکے خؤف کو محسوس نہيں کر سکتے وه گهاٹی ميں تيس سالوں سے ملٹری حقومت اور دہشتگردی جهيلنے والے مسلمانوں کا درد کيا سمجهيںگے

اناؤ معاملہ’ ايک خونی کهيل

کيا يہ سب کچھ محض ايک اتفاق ہے۔ کيا يہ تمام واقعات ايک دوسرے سے جڑے ہوۓ نہيں معلوم ہوتے۔ اور حد تو يه ہے کہ قانون اور سرکار اور قوم کے تمام راه نماؤں کے سامنے ہوتا رہتا ہے يہ خونی کهيل ۔

سادهوی پرگيا کا جاہلانا بيان

کہنے کو يہ نيا انڈيا ہے اور ترقي يافتہ راستوں پر چل رہا ہے ليکن۔ ليکن حقيقت آۓ دن ہمارے سامنے آ ہی جاتی ہے۔ يہاں قوم کے راہ نماؤں کا حال اتنا برا ہے کہ افسوس کے سوا اور کيا کيا جا سکتا ہے

منيشا بانگر’ ايک تعرف

دوسرا سوال - آپ پيشے سے ڈاکٹر ہيں اور ساتھ ہی ايک سياسی رہنما بهی۔ کاليج کے دن اور موجودا مصروفيات کے بارے ميں بتائں۔ جواب - ابتدائي تعليم کے بعد ايم بی بی ايس کيا اور ايم ڈی بهی کيا۔ اسکے بعد پی جی آئی چنڈیگڑھ سے ڈی ايم (ڈاکٹريٹ ان ميڈِسن) کيا۔ يہ سارا وقت يوں تو پڑھائی ميں گزرہ ليکن يہی وه وقت بهی تها جب میں سماجی معاملات کو زمينی شکل ميں ديکھنے سمجهنے لگی تهی۔ وہ تمام مشکلات جنکا سامنا مجھے نہيں کرنا پڑا تها انکا سامنا کرتے ہوۓ نوجوانوں کو ديکهتی تهی۔ چهوآ چھوت عروج پر تھی۔ مزہب اور قوم کے نام پر لوگوں…

منيشا بانگر’ ايک تعرف

۱۹۴۲ ميں ہونے والی کانفرينس پسماندہ اور بہوجن معاشره کے حق ميں ہونے والی بڑی پہل تهی۔ اور اس کانفرينس ميں عورتوں کے حقوق کےمتعلق بهی کئی مدعوں پر بات ہوئی۔ اس وقت کانگريس اور مہاتمہ گاندهی ايک طرف تهے اور مختلف خيالات رکهتے تهے۔ يعنی عورتوں کے پڑهنے لکھنے کی تو وکالت کرتے تهے ليکن اسے کام مردو کی قيادت ميں ہی کرنا ہوگا۔ اور مہاتمہ گاندھی نے خود بهی عورتوں کا استحصال ہی کيا ہے 'حق کی تلاش' کے نام پر۔ دانڈی مارچ کے دؤران بهی عورتوں کا کام گاندھی کے پيچھے پيچهے چلنا اور انکی مدح و ثنا کرنا ہی ہوتا تها۔ اور ايک…